128

امریکہ کی عوام نے اگر اختیاط نہ کی تو کیسز یومیہ ایک لاکھ تک ہو سکتی ہے

ویب ڈیسک :اگر عوام نے محکمہ صحت کے بتائے ہوئے اصولوں پر عمل نہ کیا تو امریکہ میں کرونا وائرس کیسز کی تعداد روزانہ ایک لاکھ تک ہو سکتی ہے ۔یہ پیش گوئی امریکہ میں وبائی امراض کے ماہر ڈاکٹر انتھونی فاچی نے کیا ۔
ڈاکٹر فاچی نے کہا کہ امریکہ میں اب یومیہ 40 ہزار کیسز سامنے آرہے ہیں۔ اگر صورتِ حال نہ بدلی تو یہ تعداد یومیہ ایک لاکھ کیسز تک پہنچ سکتی ہے جس پر ان کے بقول وہ بے حد فکرمند ہیں۔
ڈاکٹر فاچی نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ میں وبائی امراض کے شعبے کے سربراہ ہیں۔
انھوں نے یہ بات منگل کو امریکہ میں اسکول اور دفاتر کھولنے سے متعلق سینیٹ کی ایک کمیٹی کی سماعت کے دوران کہی۔ ان سے سوال کیا گیا کہ بعض ریاستوں میں کیسز کے حالیہ اضافے کا کیا نتیجہ نکلے گا۔ اس پر ان کا کہنا تھا کہ وہ بالکل درست پیش گوئی تو نہیں کرسکتے۔ لیکن ان کا خیال ہے کہ نتائج پریشان کن ہوں گے۔
سینیٹر الزبتھ وارن نے ان سے سوال کیا کہ ممکنہ طور پر کتنے امریکی وبا سے ہلاک ہوسکتے ہیں؟ اس پر ڈاکٹر فاچی نے کہا کہ وہ کوئی ایسی تعداد نہیں بتانا چاہتے جس کی تردید ہوجائے اور اس سے کم یا زیادہ نقصان ہو۔ لیکن ان کے بقول میں آپ کو اور امریکی عوام کو یہ بتانا ضروری سمجھتا ہوں کہ میں بہت پریشان ہوں کیوں کہ صورتِ حال خاصی خراب ہوسکتی ہے۔
جن علاقوں میں لوگ حفاظتی تدابیر کو نظر انداز کر رہے ہیں ان علاقوںمیں کیسز کی تعداد زیادہ ہوتی جا رہی ہے جو کہ پورے امریکہ کے لیئے خطرے کی بات ہے
ڈاکٹر فاچی کا کہنا ہے کہ میری پیش گوہی سو فیصد درست تو نہیں ہو سکتی لیکن موجودہ حالات یہ ہی دیکھا رہے ہیں ۔
احتیاطی تدابیر اختیار نہ کرنے کی صورت میں کس قدر مہلک نتائج برآمد ہو سکتے ہیں۔
ڈاکٹر فاچی نے ٹرمپ کے کاروبار کھولنے کی مخالفت کی تھی ۔لیکن کاروبار کھلنے کے بعد اب دوبارہ سے بند ہو رہے ہیں کیوں کہ کیسز میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں